97

چین کے جنوب مغربی علاقوں میں زلزلے کے جھٹکوں سے 4 افراد ہلاک، 14 زخمی ہو گئے۔

سرکاری میڈیا نے رپورٹ کیا کہ بدھ کو جنوب مغربی چین میں دو زلزلوں کے نتیجے میں کم از کم چار افراد ہلاک اور 14 دیگر زخمی ہو گئے۔

نشریاتی ادارے سی سی ٹی وی نے بتایا کہ 6.1 کی شدت کا زلزلہ چینگدو صوبائی دارالحکومت سے تقریباً 100 کلومیٹر (60 میل) مغرب میں سیچوان صوبے کے ایک کم آبادی والے علاقے سے ٹکرایا۔

اس کے بعد تین منٹ بعد قریبی کاؤنٹی میں 4.5 شدت کا دوسرا زلزلہ آیا جہاں سی سی ٹی وی کے مطابق ہلاکتیں اور زخمی ہوئے۔

براڈکاسٹر کی جانب سے حاصل کی گئی فوٹیج میں سکول کے درجنوں بچے چیختے ہوئے اور میزوں کے نیچے بطخ کرتے ہوئے دکھائے گئے جب ان کی عمارت لرزنے لگی، اس سے پہلے کہ وہ اپنے سروں پر ہتھیار رکھے کلاس روم سے باہر نکلے۔

سرکاری نشریاتی ادارے CGTN کی جانب سے سوشل میڈیا پر پوسٹ کی گئی ایک اور ویڈیو میں دکھایا گیا ہے کہ زلزلے کے پہلے جھٹکے سے لینڈ سلائیڈنگ ہوئی جس سے کاروں کو نقصان پہنچا اور سڑک پر پتھر اور مٹی بکھر گئی۔

سی سی ٹی وی کی خبر کے مطابق، یاان شہر میں حکام نے 4,500 سے زائد افراد کو زلزلہ زدہ علاقے میں روانہ کیا، جن میں ہنگامی امدادی کارکن، فائر فائٹرز اور ملٹری پولیس شامل ہیں۔

اس نے کہا کہ شہر پھنسے ہوئے لوگوں کو بچانے کے لئے ہر ممکن کوشش کر رہا ہے اور مرنے والوں کی تعداد کو ممکنہ حد تک کم کر رہا ہے”۔

سی سی ٹی وی نے مزید کہا کہ اہلکار “ثانوی آفات سے کوئی جانی نقصان نہ ہونے کو یقینی بنانے کے لیے بھی کوشش کر رہے تھے۔”

جھٹکے
چائنا ارتھ کوئیک نیٹ ورکس سینٹر نے بتایا کہ پہلا زلزلہ یاان کی لوشان کاؤنٹی میں، مقامی وقت کے مطابق شام 5 بجے کے قریب 17 کلومیٹر کی گہرائی میں آیا۔

امریکی جیولوجیکل سروے نے کہا کہ زلزلے کی شدت 5.9 ریکارڈ کی گئی اور اس کی گہرائی 10 کلومیٹر تھی۔

سرکاری میڈیا نے رپورٹ کیا کہ سیچوان صوبے کے شہروں میں زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے، جس سے کچھ ٹیلی کمیونیکیشن لائنوں کو نقصان پہنچا۔

صوبائی حکام نے بتایا کہ کچھ عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے لیکن کسی بھی عمارت کے گرنے کی ابتدائی اطلاعات نہیں ہیں۔

بدھ کی شام ایک پریس بریفنگ میں، صوبائی زلزلہ پیما بیورو کے حکام نے بتایا کہ پہلا زلزلہ 2013 میں آنے والے 7.0 شدت کے زلزلے کا آفٹر شاک تھا جس میں تقریباً 200 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

پہاڑی سیچوان چین کے دیوہیکل پانڈوں کا ایک مشہور سیاحتی مقام – زلزلے کا شکار علاقہ ہے۔

اس سال جنوری میں ہمسایہ صوبے یونان کے ساتھ سرحد پر ایک اتلی زلزلے میں 20 سے زائد افراد زخمی ہوئے تھے۔

گزشتہ ستمبر میں تین افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوئے تھے جب ایک اور اتھلے زلزلے سے دسیوں ہزار مکانات کو نقصان پہنچا تھا۔

سیچوان کی وینچوان کاؤنٹی میں 2008 میں 8.0 شدت کے زلزلے نے دسیوں ہزار جانیں ضائع کیں اور بہت زیادہ نقصان پہنچایا۔

مرنے والوں میں ہزاروں بچے بھی شامل تھے جب ناقص تعمیر شدہ اسکول کی عمارتیں گر گئیں، حالانکہ حکومت نے ہلاکتوں کی صحیح تعداد جاری نہیں کی کیونکہ اس معاملے نے سیاسی جہت اختیار کی۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں